محبت پاگل پن ہے

کبھی کبھی ایسا ہوتا کہ آپ رونا چاہتے ہیں،زور زور سے چیخیں مارنا چاہتے ہیں،اپنے اندر دبے سارے طوفان نکال باہر پھینکنا چاہتے ہیں۔۔مگر رونا تو دور کی بات آپ آواز نکالنے کے قابل بھی نہیں ہوتے۔

کبھی کبھی ایسا بھی ہوتا ہے کہ لوگ آپ کو لطیفے سنا رہے ہوتے ہیں،آپ سے مزاح اور اچھی گفتگو کرنا چاہ رہے ہوتے ہیں مگر آپ۔۔۔آپ نہ تو کچھ سن رہے ہوتے ہیں نہ سمجھ رہے ہوتے ہیں۔۔۔اور نہ ہی کوئی رسپانس دے پا رہے ہوتے ہیں۔۔۔ بس ہاں ہاں کر کے اپنے آپ کو شاید تسلیاں دے رہے ہوتے ہیں کہ آپ زندہ ہیں۔ایسے میں نہ تو آپ کے کان آپ کے ساتھ ہوتے ہیں نہ ہاتھ، نہ آنکھیں کچھ بھی نہیں۔۔۔بس آپ دنیا داری کے لیے بت بن کر بیٹھے ہوتے ہیں۔کوئی ہنسی نہیں،کوئی خوشی نہیں، کوئی مزہ نہیں کسی چیز میں بھی۔بس چلے جا رہے ہیں چلے جا رہے ہیں۔۔ ایک سیدھ میں۔۔کوئی خبر نہیں کہ کہاں جا رہے منزل کون سی ہے اور راستہ کہاں کو نکلے گا۔

ایسامختلف لوگوں کے لیے مختلف حالات میں ہوتا ہو گا۔مگرمیرے خیال سے ایسا زیادہ تر تب ہوتا ہے جب آپ کا کوئی اپنا آپ کا مان توڑ دے۔آپ کو رسوا کر دے۔آپ جسے مسیحا سمجھتے رہے تھے وہ لٹیرا نکل آئے۔

جس پر تکیہ ہو وہ ہی بپٹھ پیچھے خنجر گھونپ دے تو دوھائی کس کو دی جائے۔رویا کس کےآگے جائے اور پیٹا کس کو جائے؟ پھر تو بس بت ہی بنا جا سکتا ہے۔ایسے میں توآنسو بھی ساتھ نہیں دیتے اور نہ ہی کوئی خوشی غمی کا احساس باقی رہتا ہے۔پھر آپ خود کو وقت کے حوالے کر دیتے ہیں جیسے ڈوبتا انسان خود کو موجوں کے حوالے کر دیتا ہے۔

اور یہ دکھ پھراور بھی گہرا لگتا ہے جب آپ جسے کھو بیٹھےہوں وہ ایک لمحے کے لیےدوبارہ آپ کے سامنے آ  جائےاچانک سےاورپہلی سی الفت و محبت سےملے مگرساتھ ہی یہ توقع بھی کرے کہ آپ اس سے نہ تو شکوہ کریں، نہ گلہ نہاسے دیکھ کر ٹھٹھکیں، نہ ساکت ہوں،نہ لڑکھڑائیں،نہ اپنی ٹوٹی کرچیاں اٹھانے کی کوشش کریں۔بس ساکت بیٹھے رہیں، دنیا داری میں لگے رہیں، خوشی کا اظہار کریں۔

ہاں یہ تو ضرورممکن  ہے کہ ایسے شخص کو دوبارہ مل کر آپ ایک دم بہت خوش ہو جائیں جیسےمردے کے جسم میں روح واپس پھونک دی جائے تو وہ خوش ہو جاتا ہے۔

اسے پھر سے پا کر تھوڑی دیر کے لیے خود فریبی کرنے کو دل  للچانا تومحبت کی کتابوں سے واضح ضرورہے ۔ہاں مگر اس کےپھر سے دل پر زخم دینے سے،پھر غصہ ہونے سے،پھر سے ناراض ہونے سے اس کے پھر سے چھوڑ کر جانے سے اسے دوہری بارکھونے کا حوصلہ، محبت کرنے والوں میں کہاں سے آجاتا ہے۔۔۔یہ ابھی بھی سمجھ نہیں پائی میں۔۔۔ لوگ سچ کہتے ہیں ضرورمحبت پاگل پن ہی ہوتی ہے!۔

Advertisements

4 thoughts on “محبت پاگل پن ہے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s